AAOIFI Sharia Standards Urdu Translation

AAOIFI (Accounting and Auditing Organization for Islamic Financial Institutions) has offered it’s book AAOIFI Sharia Standards mainly in Arabic. But the organisation has offered Translations in many languages, like French, Russian and Urdu. Alhamdulillah! Allah has given our team the opportunity to perform the formatting task in this project. Thanks AAOIFI Management. And also special thanks to Mr. Omar Mustapha Ansari. The book will be available soon In Sha Allah. We have done or best tot preserve AAOIFI standards and therefore we believe that people would love our work.

Title: Sharai Meyarat (اردو: شرعی معیارات)

Organization: AAOIFI (Accounting and Auditing Organization for Islamic Financial Institutions)

Text Formatting: Team Typo (www.typo.pk)

Muqaddimah Fi Usool-il-Hadith (مقدمة في أصول الحديث)

Title : Muqaddimah Fi Usool-il-Hadith (عربي: مقدمة في أصول الحديث)

Author : Sheikh Abdul Haq Muhaddith Dehlavi Rh.

Footnotes : Sheikh Amim Ihsan Mujaddidi Barkati (شيخ عمیم الإحسان المجددي البركتي)

Taliq (تعليق) : Sheikh Noorul Bashar Muhammad Noorulhaq Hafizahullah

Year: 2016

Publisher : Maktaba Uthman Bin Affan Rh.

Tuhfa-tul-Muslimeen تحفة المسلمين

مولانا عاشق الٰہی بلند شہری ؒ کسی بر صغیر پاک وہند میں کسی تعارف کے محتاج نہیں۔ وہ اپنی دینی تصانیف کے حوالے سے مشہور ہیں۔ انہوں نے آسان اردو زبان میں مختلف کتابیں لکھی ہیں جن سے آج بھی پاک وہند کے مسلمان رہنمائی حاصل کرتے ہیں۔ ان کی ایک کتاب ”تحفۃ المسلمین“ ہے جس کے اندر روز مرہ کے مسائل آسان دلنشین انداز میں بیان کیے گئے ہیں۔ ادارۃ المعارف کراچی نے اس کتاب کی تیاری کے سلسلے میں ہم سے رابطہ کیا، جو ہمارے لیے فخر کا باعث ہے، اس کتاب کی تکمیل قریباً ایک مہینے کے عرصہ میں ہوئی، جس میں ٹائپنگ سے لے کر فارمیٹنگ اور پھر پرنٹ ریڈی بک تک سارا کام ادارے نے انجام دیا۔ ادارہ اس کام کو کرنے کا موقع دینے کے لیے ادارۃ المعارف کراچی کا مشکور ہے۔

Khair ul Usool Fi Hadith Al-Rasool خیر الأصول في حدیث الرسول ﷺ

خیر الأصول في حدیث الرسول حضرت مولانا خیر محمد جالندھری رحمۃ اللہ کی کتاب خیر الاصول اردو کی تعریب ہے جو حضرت مولانا نور البشر صاحب نے کی ہے۔ یہ ترجمہ علماء وطلبہ میں بہت مقبول ہے اور مدارس میں داخل نصاب ہے۔